ڈیلی آرکائیو

2020-06-02

خوش رہنے کے سات طریقے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ …

خوش رہنے کے سات طریقے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ برٹنڈ رسل نے اپنی مشہور کتاب "دا کنکوئیسٹ آف ہیپی نیس" یعنی خوشی کی فتح میں خوش رہنے کی سات وجوہات بیان کی ہیں ۔ جبکہ بقول مسٹر کرٹش Happiness is…

زن۔۔گُل رحمٰن | مکالمہ

مکالمہ 6 May 2020ء یہ تحریر 800 مرتبہ دیکھی گئی۔ آج وہ دیوار گرا دیہاں ! میں نےآخر ، وہ دیوار ہی گرا دیجو حصارتھی میرااک طویل فصیلاونچی میرے شانوں سےقد آور ۔۔۔مجھے قید کیےجس…

بیٹھے بیٹھے کیسا دل گھبرا جاتا ہے زہرا نگاہ بیٹھ…

بیٹھے بیٹھے کیسا دل گھبرا جاتا ہے زہرا نگاہ بیٹھے بیٹھے کیسا دل گھبرا جاتا ہے جانے والوں کا جانا یاد آ جاتا ہے بات چیت میں جس کی روانی مثل ہوئی ایک نام لیتے میں کچھ رک سا جاتا ہے ہنستی بستی راہوں کا خوش باش مسافر روزی کی بھٹی کا ایندھن بن…

”خبرےں“.. ہمارے بھی ہےں مہرباں کےسے کےسے (9)

میاںغفاراحمدحسب معمول رپورٹنگ سیکشن کی صبح ساڑھے 10 بجے کی میٹنگ جاری تھی، ایک لڑکی نقاب اوڑھے رپورٹنگ سیکشن میں داخل ہوئی جسے دیکھتے ہی میں نے کہا کہ صبح صبح ہی دارالامان کا کیس آگیا ہے۔ لیڈی رپورٹر سے کہا کہ اس کی بات سنیں،

بشیر بدرؔ جگنُو کوئی سِتاروں کی محفِل میں کھو گیا…

بشیر بدرؔ جگنُو کوئی سِتاروں کی محفِل میں کھو گیا اِتنا نہ کر ملال، جو ہونا تھا ہو گیا پروردِگار! جانتا ہے تُو دِلوں کے حال مَیں جی نہ پاؤں گا، جو اُسے کُچھ بھی ہو گیا اب دیکھ کر اُسے، نہیں دھڑکے گا میرا دِل کہنا کہ، یہ سبق بھی مجھے یاد…

شاعر:نزار قبانی مترجم: عبدالجبار ہمیں کھمبوں کی …

شاعر:نزار قبانی مترجم: عبدالجبار ہمیں کھمبوں کی طرح کھڑا کیا گیا ذبح ہوتی بھیڑ کی مانند، ہم پھولی ہوئی سانس سے دوڑے ہمیں سفاک قاتلوں کے جوتوں کو چاٹنے پے مجبور کیا گیا انہوں نے مریم کے بیٹے عیسیٰ کو چرایا جب وہ ابھی معصوم بچہ تھا انہوں نے…

( غیر مطبوعہ ) لگا ہے دل میں کیسا شوق کا میلا ، …

( غیر مطبوعہ ) لگا ہے دل میں کیسا شوق کا میلا ، نمی دانم نہ جانے کر کے بیٹھا آرزو کیا کیا ،. نمی دانم جھلستی دھوپ میں یوں ہی بھٹکتا پھر رہا ہوں میں ملے گا کب مجھے اُس زلف کا سایہ ،. نمی دانم وہ ظالم دوُر رہ کر ہی سدا تڑپاتا رہتا…

بشیر بدرؔ جگنُو کوئی سِتاروں کی محفِل میں کھو گیا…

بشیر بدرؔ جگنُو کوئی سِتاروں کی محفِل میں کھو گیا اِتنا نہ کر ملال، جو ہونا تھا ہو گیا پروردِگار! جانتا ہے تُو دِلوں کے حال مَیں جی نہ پاؤں گا، جو اُسے کُچھ بھی ہو گیا اب دیکھ کر اُسے، نہیں دھڑکے گا میرا دِل کہنا کہ، یہ سبق بھی مجھے یاد…

( غیـر مطبـوعـہ ) وہی صحرا سا بہت اور ذرا سا دریا…

( غیـر مطبـوعـہ ) وہی صحرا سا بہت اور ذرا سا دریا مجھ کو لگتا ہے ترا نام سنا سا دریا سب پہنچتے ہیں فقط پیاس بجھانے اپنی کوئی دیکھے بھی تو کیسے کہ ہے پیاسا دریا تیری آنکھیں ہیں سمُندر یہ بتایا جب سے تب سے آتا ہے نظر مجھ سے خفا سا…