ڈیلی آرکائیو

2020-07-02

( غیــر مطبـوعـہ ) مری گفتگو میں ترا ذکر آنا تو ج…

( غیــر مطبـوعـہ ) مری گفتگو میں ترا ذکر آنا تو جیسے کہیں آسماں میں ازل سے لکھا جا چکا ہے یقین اب میں خود کو دلانے لگا ہوں کہ یہ دوستی کے علاوہ کوئی عشق کا سلسلہ ہے چراغوں کے بجھنے پہ ماتم کناں اہلِ محفل کو آخر کوئی یہ الَمیہ بتائے تو…

ساغرؔ صدیقی نظر نظر بیقرار سی ہے، نَفس نَفس پُراس…

ساغرؔ صدیقی نظر نظر بیقرار سی ہے، نَفس نَفس پُراسرار سا ہے میں جانتا ہُوں کہ تم نہ آؤ گے، پھر بھی کُچھ اِنتظار سا ہے مِرے عزیزو! میرے رفیقو! کوئی نئی داستان چھیڑو غمِ زمانہ کی بات چھوڑو، یہ غم تو اب سازگار سا ہے وہی فسُردہ سا رنگِ محفل،…

( غیــر مطبـوعـہ ) مَــوت مَوت جیبوں میں ہے م…

( غیــر مطبـوعـہ ) مَــوت مَوت جیبوں میں ہے موت گلیوں میں ، سڑکوں پہ، چوراہوں پر موت اونچے مکانوں کی شہ سرخیوں روغنی چمنیوں، ادھ کھلی کھڑکیوں جھونپڑوں، بستیوں ،ٹوٹے پھوٹے گھروں موت فٹ پاتھ پر موت بینچوں کے نیچے ہری وادیوں…

تقدیر… یا تدبیر…؟ – ڈاکٹر اظہر وحید

تقدیر اور تدبیر کے حوالے سے کوئٹہ سے اجمل کاسی کا ایک سوال تھا، سوچاٗ انفرادی جواب دینے کی بجائے اَفادِ عامہ کیلئے جوابی کالم ہی تحریر کر دیا جائے۔ تقدیر اور تدبیر کی بحث اتنی ہی قدیم ہے جتنا قدیم خود انسانی شعور۔ تدبیر اور تقدیر کے…

( غیـر مطبـوعـہ ) اے خدائے زمین و زماں ! زندگی، آ…

( غیـر مطبـوعـہ ) اے خدائے زمین و زماں ! زندگی، آخـری ساعتوں میں ٹھکانے لگے اب یہ نوحے کی آواز موقوف ہو، اور فــرشتہ کوئی گیت گانے لگے ماجرےمیں سلیماں کے اجلال پر، مفلسی مرحبا کہہ کے اٹّھے مگر حسنِ یوسف کا قصّہ سناتے ہوئے، میری بد…

=== میں پھر بھی طلوع ہوں گی === شاعرہ: مایا اینجل…

=== میں پھر بھی طلوع ہوں گی === شاعرہ: مایا اینجلو مترجم: ناہیدؔ ورک *************** تم تاریخ کے اوراق میں میری شخصیت مسخ کر کے لکھ سکتے ہو اپنے تلخ اور من گھڑت جھوٹوں کے ساتھ، تم میرا وجود پامال کر کے مٹی میں رول سکتے ہو مگر میں پھر…

آہ! منور حسن بھی چلے گئے

حافظ محمد ادریس”نصف صدی کا قصہ ہے دو چار برس کی بات نہیں“ ہماری تو نصف صدی سے بھی زائد پچپن سال کی داستان ہے۔ سچ ہے یہ دنیا مسافر خانہ ہے۔یہاں جو بھی آیا اسے چلے جانا ہے۔ خوش نصیب ہے وہ مسافر جو ہلکی پھلکی زندگی گزارے۔ اپنے

میں جس کو راہ دکھاؤں وہی ہٹائے مجھے میں نقشِ پا ہ…

میں جس کو راہ دکھاؤں وہی ہٹائے مجھے میں نقشِ پا ہوں کوئی خاک سے اٹھائے مجھے مہک اٹھے گی فضا میرے تن کی خوشبو سے میں عود ہوں، کبھی آ کر کوئی جلائے مجھے چراغ ہوں تو فقط طاق کیوں مقدر ہو کوئی زمانے کے دریا میں بھی بہائے مجھے میں مشتِ خاک…