ڈیلی آرکائیو

2020-07-26

ناول: #پراسرار_اجنبی #The…

ناول: #پراسرار_اجنبی #The_Invisible_Man مصنف: #ایچ_جی_ویلز مترجم: #عابد_سہیل پبلشر: #فکشن_ہاوس تعارف: #محمد_عاصم ⭐.... 💓.... 💓.... 💓.... 💓... ⭐ "تم حیرت انگیز طور پر مستعد اور چلاک رہے. اگرچہ تمہیں اس سے کیا…

اجڑا ہوا شہر پھر بساؤں یہ حوصلہ اب کہاں سے لاؤں …

اجڑا ہوا شہر پھر بساؤں یہ حوصلہ اب کہاں سے لاؤں ٹوٹے ہوئے آئینے میں خود کو میں دیکھ جو لوں ،تو ڈر نہ جاؤں زخموں سے بھرے چمن میں رہ کر پھولوں سے مہکتے گیت گاؤں اے کاش ،وفا کی روشنی سے اُمید کا اک دیا جلاؤں تجدیدِ وفا کے آسرے پر زخموں…

چینی سکینڈل کے تناظر میں معاشی اصلاحات کی ضرورت – محمد ندیم سرور

پچھلے مالی سال، تقریبا ایک دہائی کے بعد، پاکستانی عوام کو یکے بعد دیگرے چینی اور گندم کی قلت کا سامنا کرنا پڑا۔ حکومت نے منتخب شوگر ملوں کے فرانزک آڈٹ کے بعد انکوائری کمیشن اور فرانزک آڈٹ دونوں کی رپورٹوں کو عوام کے سامنے پیش کیا، جو کہ…

کشمیر کا مستقبل اور آزاد کشمیر۔۔نذر حافی

کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ صرف کشمیری ہی کریں گے۔ یہ فیصلہ کرنا کشمیریوں کا انسانی اور فطری حق ہے۔ جب تک کشمیریوں کو یہ حق نہیں ملتا، اس وقت تک اس منطقے میں تعمیری، اقتصادی اور ترقیاتی منصوبوں کی کوئی پائیدار ضمانت نہیں۔ اگر…

بچھڑتے وقت بھی رویا نہیں ہے یہ دل اب ناسمجھ بچہ ن…

بچھڑتے وقت بھی رویا نہیں ہے یہ دل اب ناسمجھ بچہ نہیں ہے میں ایسے راستے پہ چل رہی ہوں جو منزل کی طرف جاتا نہیں ہے محبت کی عدیم الفرصتی میں اسے چاہا مگر سوچا نہیں‌ہے لبوں پر مسکراہٹ بن کے چمکا جو آنسو آنکھ سے ٹپکا نہیں ہے جب آئینہ تھا تب…

( غیــر مطبــوعــہ ) نذر ِ سراجؔ اورنگ آبادی تر…

( غیــر مطبــوعــہ ) نذر ِ سراجؔ اورنگ آبادی تری آنکھ میں کوئی طاق تھا ' جہاں نیند میری دھری رہی یہ ترا کرم مِرے مہرباں! مِری شــــاخِ خـــــواب ہری رہی ترے لمس سے مِرا انگ انگ مہَک اٹھـــا ، میں سـنور گئی مِری مانگ بھی کسی باغ سی…

جیسے خوشیوں میں غم نہیں ہوتے آگ پانی بہم نہیں ہوت…

جیسے خوشیوں میں غم نہیں ہوتے آگ پانی بہم نہیں ہوتے مدتوں ہم قریب رہتے ہیں فاصلے پھر بھی کم نہیں ہوتے زندگی بھر کے ساتھ میں اکثر ہمسفر ہم قدم نہیں ہوتے سانحے دل پہ جو گزرتے ہیں سب کے سب تو رقم نہیں ہوتے پوجا ہوتی ہے زندگی بھر کی چار دن کے…

ایک شاخِ بے ثمر تھی میں عطا سے پیشتر بار آور ہوگ…

ایک شاخِ بے ثمر تھی میں عطا سے پیشتر بار آور ہوگئی ہے جو دعا سے پیشتر چن لیا جس دل کو تیر ے عشق نے اُس کے لیے کیا فنا کے بعد ہے اور کیا فنا سے پیشتر وقت بے ترتیب تھا خلقت سے پہلے سر بسر زندگی تاریک تھی تیری ضیا سے پیشتر مجھ کو دے مولا وہ…