ڈیلی آرکائیو

2020-07-27

ایک دوست کی کہانی: خلیل جبران کی زبانیتحریر: خلیل …

ایک دوست کی کہانی: خلیل جبران کی زبانیتحریر: خلیل جبرانانگریزی سے اردو ترجمہ : ڈاکٹر خالد سہیل (کینیڈا)میں اپنے اس دوست کو نوجوانی کے اس دور سے جانتا تھا جب وہ زندگی کی راہ بھٹک چکا تھا جب وہ اپنی خواہشات کی شہ پر موت سے ہولی کھیلنے سے…

زخم بھریئے اسے رفو کیجے اب کوئی اور گفتگو کیجے ذ…

زخم بھریئے اسے رفو کیجے اب کوئی اور گفتگو کیجے ذکر میرا نہ کو بکو کیجے جو گلہ ہے وہ دو بدو کیجے چاک کر دیجئے قبائے سکوت رقص بسمل ہے ہا و ہو کیجے وحشتیں آنکھ میں سمٹ آئیں دل کو اتنا لہو لہو کیجے گھونٹ بھریئے شراب ہجراں کا تلخی ٔ غم کو ہم…

ہم ایک شہر میں جب سانس لے رہے ہوں گے ہمارے بیچ زم…

ہم ایک شہر میں جب سانس لے رہے ہوں گے ہمارے بیچ زمانوں کے فاصلے ہوں گے وہ چاہتا تو یہ حالات ٹھیک ہو جاتے بچھڑنے والے سبھی ایسا سوچتے ہوں گے یہ بے بسی سے تری راہ دیکھنے والے گئے دنوں میں ترے خواب دیکھتے ہوں گے کہا بھی تھا کہ زیادہ قریب مت…

نظم کا کچھ بھی نام نہیں – جاناں ملک شہزادے ! اے …

نظم کا کچھ بھی نام نہیں - جاناں ملک شہزادے ! اے ملک سخن کے شہزادے ! دیکھو میں نے نظم لکھی ہے نظم کہ جیسے دل کا شہر۔۔۔۔۔ شہر کہ جس میں تم رہتے ہو آدھے ہنس ہنس باتیں کرتے اور آدھے گم سم رہتے ہو تمہیں ادھوری باتیں اور ادھوری نظمیں اچھی لگتی…

گوتم بدھ کی باتیں کبھی یقین نہ کرو چاہے تُم نے ک…

گوتم بدھ کی باتیں 🍁 کبھی یقین نہ کرو چاہے تُم نے کہیں پڑھا ہو، یا کسی نے تمہیں کچھ بتایا ہو، یا بے شک مَیں نے ہی کچھ کہا ہو جب تک کہ تمہیں تمہارے اندر سے آگاہی نہ ملے اور تمہاری عقل اُسے تسلیم نہ کرے۔ لہذا اپنی آگاہی اور عقل کی استعداد…

غیر مقبول مگر درست فیصلوں کی ضرورت ہے۔۔محمد زبیر خان موہل

یاد رکھیں کچھ فیصلے غلط ہوتے ہیں مگر مقبولِ عام ہوتے ہیں۔ نا سمجھ ان فیصلوں کی بہت پذیرائی کرتے ہیں اور وقت گزرنے پر ان فیصلوں کے نتائج قوموں کو بھگتنا پڑتے ہیں جبکہ کچھ فیصلے غیر مقبول ہوتے ہیں مگر وقت…

درد کے لمحوں میں ڈھال لگتا ہے ترا خیال ہی مجھ کو …

درد کے لمحوں میں ڈھال لگتا ہے ترا خیال ہی مجھ کو وصال لگتاہے گھٹن کچھ ایسی کہ مررہی ہے زندگی یہ قیدوبند کا موسم وبال لگتا ہے جو شب کو بھیگتے کاجل میں جاگ اٹھے وہ درد مجھ کو بڑا باکمال لگتا ہے یہ دھند بکھری ہے یا ناتمام خواہشوں کا بچھا…

وُہ جِس گھڑی تیری آنکھوں کو دید ہوتی ہے تو ایک ل…

وُہ جِس گھڑی تیری آنکھوں کو دید ہوتی ہے تو ایک لمحے میں پِھر دِل کی عید ہوتی ہے جو آبرُو کو بچاتے ہوئے مَرے عورت کہو نہ مُردہ اُسے، وُہ شہید ہوتی ہے ادب کرو گے، تُمہیں بھی ادب مِلے گا یہاں کِسی کِسی کی نصیحت مُفید ہوتی ہے تُمہیں نہ کوئی…

سیاہ رات کی ہر دلکشی کو بھول گئے دئے جلا کے ہمیں …

سیاہ رات کی ہر دلکشی کو بھول گئے دئے جلا کے ہمیں روشنی کو بھول گئے کسی کلی کے تبسّم نے بے کلی دی ہے کلی ہنسی تو ہم اپنی ہنسی کو بھول گئے جہاں میں اور رہ و رسمِ عاشقی کیا ہے فریب خوردہ تری بے رخی کو بھول گئے یہی ہے شیوۂ اہلِ وفا…