ڈیلی آرکائیو

2020-08-13

اس گروپ میں یہ کبھی نہیں دیکھا گیا کہ آیا جس متن ک…

اس گروپ میں یہ کبھی نہیں دیکھا گیا کہ آیا جس متن کو پیش کرنے جارہے ہیں اس کا اردو زبان میں ترجمہ صحیح ہو بھی گیا ہے کہ نہیں... یا پڑھنے والوں نے غلطی کی نشان دہی کر دی ہو... کئ تحاریر گزری ہیں آنکھوں سے جن کو پڑھ کر پتہ چلتا ہے کہ الفاظ…

یہ ہمیں ہیں کہ ترا درد چھپا کر دل میں کام دنیا کے…

یہ ہمیں ہیں کہ ترا درد چھپا کر دل میں کام دنیا کے بدستور کیے جاتے ہیں ... صبا اکبر آبادی کی پیدائش Aug 14, 1908 صبا اکبر آبادی کا اصل نام خواجہ محمد امیر تھا اور وہ 14 اگست 1908ء کو آگرہ میں پیدا ہوئے تھے۔ صبا اکبر آبادی کی شاعری کا آغاز…

پاکستان کا نحیف و نزار برگد – سعدیہ بشیر

میرے سامنے برگد کے ایک درخت کی تصویر ہے جس کی مماثلت ایک نحیف و نزار بوڑھے سے ہے۔ اسے ہرا بھرا اور شادابیوں سے بھرپور ہونا چاہئے تھا کیونکہ نہ تو وسائل کی کمی ہے نہ ہی خلوص و دیانت کی لیکن المیہ یہ ہے کہ اس کے چہرے پر صدہا سلوٹیں ہیں جن…

ٰیوں زمانے میں مرا جسم بکھر جائے گا مرے انجام سے…

ٰیوں زمانے میں مرا جسم بکھر جائے گا مرے انجام سے ہر پھول نکھر جائے گا جام خالی ہے، صراحی سے لہو بہتا ہے آج کی رات وہ مہتاب کدھر جائے گا سیلِ گریہ مری آنکھوں سے یہ کہہ جاتا ہے بستیاں روئیں تو دریا بھی اتر جائے گا تو کوئی ابرِ گہر…

یوں ملاقاتیں ادھوری چھوڑ کر جاتے نہ تھے تُم…

یوں ملاقاتیں ادھوری چھوڑ کر جاتے نہ تھے تُم تو میری دُکھ بھری باتوں سے اُکتاتے نہ تھے تُم تو پہلو میں مچل جاتے تھے خواہش کی طرح تُم تو جذبوں کو فقط لفظوں سے بہلاتے نہ تھے کس قدر احساسِ ناموسِ محبت تھا تمہیں تُم تو رو…

"پانچویں جماعت میں میں نے ایک دفعہ شاہ جہاں ک…

"پانچویں جماعت میں میں نے ایک دفعہ شاہ جہاں کے باپ کا نام ہمایوں بتا دیا تھا اور ماسٹر فاخر حسین نے مرغا بنا دیا تھا ۔ وہ سمجھے میں مذاق کر رہا ہوں یہ غلطی نہ بھی کرتا تو اور کسی بات پر مرغا بنا دیتے ۔ اپنا تو طالب علمی کا زمانہ اسی…

ریشیاں سے لیپہ سیکٹر۔۔آغرؔ ندیم سحر

ہم اتوار  کی شام کھوڑیاں گاؤں پہنچے جوباغ سے دو گھنٹے کی مسافت پہ تھا۔اگر ہم باغ سے ہی صبح لیپہ روانہ ہوتے تو ہم ایک دن میں لیپہ سے واپس نہیں آ سکتے تھے۔لہذا ہمارے دوست شرافت حسین نے ہمیں مشورہ دیا کہ ہم…

ناول: Twenty Thousand Leagues under The Seaمصنف: J…

ناول: Twenty Thousand Leagues under The Seaمصنف: Jules Verneترجمہ: سمندر کی پُراسرار دنیامترجمہ: حفصہ صدیقی۔۔۔۔۔۔دو سو سال پہلے لکھا گیا ایک عجیب وغریب ناول۔ اس وقت نہ تو بجلی ایجاد ہوئی تھی، نہ آب دوزیں اورنہ ہوائی جہاز۔سمندر کی گہرائیوں…