ڈیلی آرکائیو

2020-10-09

کسی اور غم میں اتنی خلشِ نہاں نہیں ہے………. (م…

کسی اور غم میں اتنی خلشِ نہاں نہیں ہے.......... (مصطفیٰ زیدی) کسی اور غم میں اتنی خلشِ نہاں نہیں ہے غمِ دل مرے رفیقو غمِ رائیگاں نہیں ہے کوئی ہم نفس نہیں ہے کوئی رازداں نہیں ہے فقط ایک دل تھا اب تک سو و ہ مہرباں نہیں ہے کسی آنکھ کو صدا دو…

وحشیوں کا انتظار جنوبی افریقہ کے معروف ادیب جے ای…

وحشیوں کا انتظار جنوبی افریقہ کے معروف ادیب جے ایم کوٹسی(J.M.Coetzee) ناول نگار مترجم اور ماہر لسانیات بھی ہیں۔کوٹسی نے پانچ ناول لکھے جن میں سے دو کو بوکر پرائز دیا گیا۔لیکن ان کو بین الاقوامی شہرت زیر نظر ناول waiting for the Barbarians…

ڈاکٹرعمرانہ مشتاق مانیؔ کا یومِ پیدائش October 1…

ڈاکٹرعمرانہ مشتاق مانیؔ کا یومِ پیدائش October 10, 1982 معروف شاعرہ، ادیبہ، صحافی، عمرانہ مشتاق 10اکتوبر 1982ء میں سیالکوٹ میں پیدا ہوئیں۔ ابتدائی تعلیم وہیں سے حاصل کی۔ گریجویشن گورنمنٹ کالج گوجرانوالہ سے کی۔ انہوں نے جغرافیہ میں ایم فل…

بزم کونین سجانے کے لئے آپﷺ آئے شمعِ توحید جلانے ک…

بزم کونین سجانے کے لئے آپﷺ آئے شمعِ توحید جلانے کے لیے آپﷺ آئے ایک پیغام جو ہر دل میں اجالا کر دے ساری دنیا کو سنانے کے لئے آپﷺ آئے ایک مدت سے بھٹکتے ہوئے انسانوں کو ایک مرکز پہ بلانے کے لئے آپﷺ آئے ناخدا بن کے ابلتے ہوئے طوفانوں میں…

آپ احباب تک #لوئیز_گلوک_کی_ایک_نظم پہنچانے کی کاوش…

آپ احباب تک #لوئیز_گلوک_کی_ایک_نظم پہنچانے کی کاوش اپنی قیمتی رائے سے نوازئیےگا #اک_نظمِ_محبت ہمیشہ کچھ ایسا ضرور ہوتا ہے جو درد کا سبب بنتا ہے۔ تمہاری ماں بُنتی ہے وہ ایک سکارف میں سرخ رنگ کا ہر شیڈ بکھیرتی ہے۔ اس نے یہ کرسمس کے لیے…

سکوتِ شب میں اندھیروں کو مسکرانے دے بجھے چراغ تو …

سکوتِ شب میں اندھیروں کو مسکرانے دے بجھے چراغ تو پھر جسم و جاں جلانے دے دکھوں کے خواب نما نیم وا دریچوں میں وفورِ کرب سے تاروں کو جھلملانے دے جلانا چاہے اگر چاہتوں کا سورج بھی بدن کے شہر کو اس دھوپ میں جلانے دے تو اپنے…

یوسا کا یہ اقرار ریکارڈ پر موجود ہے جب وہ کاغذ اور…

یوسا کا یہ اقرار ریکارڈ پر موجود ہے جب وہ کاغذ اور قلم لے کر اپنا پہلا ناول لکھنے بیٹھا تو ولیم فاکنر پہلا ناول نگار تھا جسے اس نے پڑھا تھا، یوسا فاکنر کی فنی عملیات دیکھ کر دنگ تھا اور اس نے شعوری طور فاکنر کی پیروی کرنے کی کوشش کی، واضح…

کہہ رہا ہے شورِ دریا سے سمندر کا سکوت جس کا جتنا …

کہہ رہا ہے شورِ دریا سے سمندر کا سکوت جس کا جتنا ظرف ہے اتنا ہی وہ خاموش ہے .... ناطقؔ لکھنؤی کا یومِ وفات October 09, 1950 *روزنامہ ' ملک و ملت' کے مدیر، ماہرِ علم متداولہ اور ممتاز و معروف شاعر” ناطقؔ لکھنؤی صاحب “ کا نام…

انقلاب ایران: “اٹھا ہوں آنکھوں میں اک خواب ناتمام لیے” (قسط دوم )….ڈاکٹر طاہر منصور قاضی

SHOPPINGSHOPPINGایران میں علما کا سیاسی کردار اور معاشی مفاد معاشرے میں مفادات کی بات چلی ہے تو سیاست کے تناظر میں تھوڑی سی بات علماء کے مالی اور معاشی مفاد کی کرتے ہیں۔ ایرانی انقلاب میں علماء کا کردار اہم ہے مگر انقلاب کی وجوہات کا…