ڈیلی آرکائیو

2021-03-18

تُو نے وہ سُنا ہے کہ غور کے جنگل میں ایک سردار کا …

تُو نے وہ سُنا ہے کہ غور کے جنگل میں ایک سردار کا بوجھ گھوڑے سے گِر پڑا، تو اُس نے کہا! دنیا دار کی تنگ آنکھ کو یا قناعت بھر سکتی ہے یا قبر کی مٹی۔ اقتباس کتاب:بوستان سعدی تالیف:مصلح الدین سعدیؒ انتخاب و ٹائپنگ:بلاول علی بشکریہ…

گدھ۔۔ ماخوذ ۔۔ میاں محمدؔ صاحب کا ایک شعر ہے۔۔ ق…

گدھ۔۔ ماخوذ ۔۔ میاں محمدؔ صاحب کا ایک شعر ہے۔۔ قدر پھلاں دا بلبل جانے صاف دماغاں والی قدر پھلاں دا گرجھ کی جانے مردے کھاون والی۔ میاں صا حب کی بات تو دل کو لگتی ہے۔ لیکن قدر دانی کا شعور یا سوجھ بوجھ بھی خدا کی دین ہے،… More جسے چاہے دے…

ایک دیوار اٹھائی تھی بڑی عجلت میں وہی دیوار گران…

ایک دیوار اٹھائی تھی بڑی عجلت میں وہی دیوار گرانے میں بہت دیر لگی ... یاسمین حمید کی پیدائش Mar 18, 1951 پردہ آنکھوں سے ہٹانے میں بہت دیر لگی ہمیں دنیا نظر آنے میں بہت دیر لگی نظر آتا ہے جو ویسا نہیں ہوتا کوئی شخص ... More

آلِ قابیل۔۔ڈاکٹر ستیہ پال آنند

کوئی سبطِ آدم بھی ہے اور مجھ سےسوا اس جہاں میںکہ میں اک اکیلاہی حقدار و مختار ہوں جدِ امجدکی اس حق رسی کا؟جو اندر سے میرےیہ آواز ابھریتو میں نے یہ چلّا کے باہر کے لوگوں سے پوچھااٹھائے گئے ہاتھ باہر کے…

مولانا چراغ حسن حسرتؔ کی شہرت زیادہ تر ایک صحافی ک…

مولانا چراغ حسن حسرتؔ کی شہرت زیادہ تر ایک صحافی کی رہی لیکن وہ ایک اعلیٰ پائے کے شاعر بھی تھے۔اُنہوں نے بہت سی نظمیں اور غزلیں بھی لکھیں لیکن ان کا زیادہ تر کلام یا تو نا پید ہوگیا یا پھر منتشر حالت میں ہے۔حسرتؔ کے کلام کے چند اشعار ذیل…