ڈیلی آرکائیو

2021-04-07

دلِ فسردہ پہ سو بار تازگی آئی مگر وہ یاد کہ جا کر…

دلِ فسردہ پہ سو بار تازگی آئی مگر وہ یاد کہ جا کر نہ پھر کبھی آئی چمن میں کون ہے پُرسانِ حال شبنم کا؟ غریب روئے تو غنچوں کو بھی ہنسی آئی نویدِ عیش سے بھی لطفِ عیش مل نہ سکا لباسِ غم ہی میں آئی اگر خوشی آئی کسی طرح بھی زمانے کو بس میں کر…

آم کشی کا غیر سنجیدہ مسئلہ ۔۔۔ معاذ بن محمود

یہ معاملہ تین چار روز سے سوشل میڈیا کے حلقوں میں زبان عام ہے۔ باچیز خاموشی سے بیٹھ کر جائزہ لیتا رہا کہ راسخ ثبوت کا عدمباز رکھنے کا باعث رہا۔ آج بی بی سی کی ایک رپورٹ نظر سے گزری جس کے مطابق آم کے برسوں پرانے درخت زمیں بوس…

اٹلی ہے دیکھنے کی چیز(قسط12)۔۔سلمیٰ اعوان

ویٹی کن سٹی o شاہی قلعے جیسی بلندو بالا پُرہیبت دیوار کے سائے میں چلتی سیکورٹی کے لام ڈور والے سلسلوں سے گزرتی لائن کے سلسلے اکتاہٹ کے ساتھ ساتھ دلچسپی لئیے ہوئے بھی تھے۔o ڈریس کوڈ کی پابندی لازمی امر ہے۔o Sistine chapelکو بلاشبہ…

وقت ہی نہیں ملتا ہجر کے زمانے میں کام کچھ زیادہ …

وقت ہی نہیں ملتا ہجر کے زمانے میں کام کچھ زیادہ ہے غم کے کارخانے میں دن سمیٹ لیتے ہیں شام کو سہولت سے رات صرف ہوتی ہے رات کے بچھانے میں ہجر ہی کا موسم ہو اور پے بہ پے غم ہو اک فضا ضرورت ہے شعر کے بنانے میں ایک دن میں ہوتا ہے المیہ…

برٹولٹ بریخت کے کھیل ”گلیلیو“ میں ایک طالب علم گلی…

برٹولٹ بریخت کے کھیل ”گلیلیو“ میں ایک طالب علم گلیلیو سے مخاطب ہو کر کہتا ہے۔ ”بدنصیب ہے وہ دھرتی جہاں ہیرو پیدا نہیں ہوتے“۔ بوڑھا گلیلیو جواب دیتا ہے۔ ”نہیں آندرے! بد نصیب ہے وہ دھرتی جسے ہر روز ایک ہیرو کی ضرورت پیش آتی ہے“۔ نامور جرمن…

چشم حیرت کو تعلق کی فضا تک لے گیا کوئی خوابوں سے…

چشم حیرت کو تعلق کی فضا تک لے گیا کوئی خوابوں سے مجھے دشت بلا تک لے گیا ٹوٹتی پرچھائیوں کے شہر میں تنہا ہوں اب حادثوں کا سلسلہ غم آشنا تک لے گیا دھوپ دیواروں پہ چڑھ کر دیکھتی ہی رہ گئی کون سورج کو اندھیروں کی گپھا تک لے گیا عمر بھر…

مرے پاس جو ہوتے آسمان کے کاڑھے ہوئے رُوپہلی سنہر…

مرے پاس جو ہوتے آسمان کے کاڑھے ہوئے رُوپہلی سنہری روشنیوں سے بنوائے راتوں کے، روشنیوں کے اور دھندلکوں کے کیا کالے ، کیا نیلے ، اور کیا مدھم کپڑے ترے پیروں تلے مَیں سارے کے سارے بچھا دیتا میں مفلس ہوں ، مرے پاس ہے کیا خوابوں کے سوا…