ڈیلی آرکائیو

2021-04-27

امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں افتخار عار…

امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں افتخار عارف امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں ذرا سی دیر کو دنیا سے کٹ کے دیکھتے ہیں بکھر چکے ہیں بہت باغ و دشت و دریا میں اب اپنے حجرۂ جاں میں سمٹ کے دیکھتے ہیں تمام خانہ بدوشوں میں مشترک…

گارسیںؔ: "بس چھوڑو اس بات کو۔ ۔ ۔ اس بات کا ذکر ن…

گارسیںؔ: "بس چھوڑو اس بات کو۔ ۔ ۔ اس بات کا ذکر نہیں ہو گا۔ میں یہاں اس لئے ہوں کہ میں اپنی بیوی کو اذیت پہنچاتا تھا۔ بس۔ ۔ ۔ اور کچھ نہیں۔ ۔ ۔ پانچ سال تک ۔ ۔ ۔ وہ اب بھی اذیت میں ہے۔ ۔ ۔ وہ رہی میری بیوی ! جب بھی میں اس کا ذکرکرتا ہوں…

عمر جلووں میں بسر ہو یہ ضروری تو نہیں خاموش غازی …

عمر جلووں میں بسر ہو یہ ضروری تو نہیں خاموش غازی پوری عمر جلووں میں بسر ہو یہ ضروری تو نہیں ہر شب غم کی سحر ہو یہ ضروری تو نہیں چشم ساقی سے پیو یا لب ساغر سے پیو بے خودی آٹھوں پہر ہو یہ ضروری تو نہیں نیند تو درد کے بستر پہ بھی آ سکتی…

​وہ لائے میرے لیے اک لگام ہیروں جڑی۔۔ستیہ پال آنند

لگام کیا تھی، جھمکڑا تھا، جگمگاہٹ تھیکہ جیسے کوئی بھبھک، پھلجھڑی ہو، کوندا ہومرا تو جی بہت للچایا دیکھ کر اس کوخیال آیا، اک مدّت سے میں مقید ہوںیہ اصطبل ہی مرا بندی گھر ہے، زنداں ہےبندھا ہوا طنابوں سے ہر…

تِرے آگے یُوں ہیں دَبے لُچّے فُصَحا عَرَب …

تِرے آگے یُوں ہیں دَبے لُچّے فُصَحا عَرَب کے بَڑے بَڑے کوئی جانے مُنھ میں زباں نہیں، نہیں بَلکہ جِسم میں جاں نہیں۔۔۔! امام احمد رضاؔ خان فاضلِ بریلیؒ آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی زبانِ اَقدَس وَحِی…

میں ایک بیمار اور بیزار آدمی ہوں۔ میرے دل میں بغض …

میں ایک بیمار اور بیزار آدمی ہوں۔ میرے دل میں بغض و عداوت، کینہ اور حسد و عناد بھرا ہوا ہے۔ میری شخصیت میں ذرا بھی دلکشی نہیں۔ اور میرا دل بھی چھلنی چھلنی ہے۔ یہ حقیقت ہے کہ اپنی اصلی بیماری سے میں خود بھی لاعلم ہوں اور مجھے کوئ اندازہ…

زندگی اور کچھ بھی نہیں تیری میری کہانی ہے سنتوش آ…

زندگی اور کچھ بھی نہیں تیری میری کہانی ہے سنتوش آ نند اک پیار کا نغمہ ہے، موجوں کی روانی ہے زندگی اور کچھ بھی نہیں، موجوں کی روانی ہے اک پیار کا نغمہ ہے، موجوں کی روانی ہے زندگی اور کچھ بھی نہیں، موجوں کی روانی ہے کچھ پا کر کھونا ہے، کچھ…

بھڑوے ۔۔اظہر سید | مکالمہ

بھڑوے مطلب دنیا کی طلب میں ضمیر فروشی کرنا ۔ بھلے کوئی بے بس اور مجبور جسم فروش عورتوں کا بھڑوا ہو یا قانون اور انصاف کے ساتھ اپنا قلم فروخت کرنے والا دونوں ایک ہی نسل سے تعلق رکھتے ہیں ،بس کپڑے دونوں کے مختلیف ہیں ،اصل دونوں کی…