ڈیلی آرکائیو

2021-07-13

افغان ایشو! پاکستان نے کیا کھویا اور کیا پایا

محمدنعیم قریشیامریکی فوج کے جنرل آسٹن اسکاٹ ملر اس وقت افغانستان سے اپنی فوجوں کی واپسی کے عمل کی نگرانی کررہے ہیں، امریکا نے طالبان کے ساتھ ہونے والے امن معاہدے کے مطابق مئی 2021تک افغانستان سے انخلا کرناتھا،واشنگٹن میں

تمہیں اداس سا پاتا ہوں میں کئی دن سے نہ جانے کون …

تمہیں اداس سا پاتا ہوں میں کئی دن سے نہ جانے کون سے صدمے اٹھا رہی ہوتم وہ شوخیاں وہ تبسم وہ قہقہے نہ رہے ہر ایک چیز کو حسرت سے دیکھتی ہو تم چھپا چھپا کے خموشی میں اپنی بے چینی خود اپنے راز کی تشہیر بن گئی ہو تم . میری امید اگر مٹ گئی تو…

قسط ۱۔ عین جالوت: سلطان قطز۔۔۔ محمد اشتیاق

نوٹ: سلطان مصر الملک المظفر سیف الدین قطز غلامان مصر میں سے تھا۔ اس نے تقریبا ایک سال مصر میں حکومت کی لیکن منگولوںکے طوفان آگے بند باندھ کر ہمیشہ کے لیے تاریخ میں اپنا نام رقم کر لیا۔ روایت کے مطابق شام کے بازار میں بکنے کے لیےسلطنت…

قریش کا نظامِ ایلاف : ایک معاہدہ جس نے عرب کی تاریخ اور قسمت بدل دی – وليد فكري / ترجمہ: تنویر…

يا أيها الرجل المُحَوِل رَحله هلا نَزِلت بآل عبد منافِ الآخذون العهد من آفاقهم والراحلون برحلة الإيلافِ یہ اشعار مطرود بن کعب الخزاعی کے ہیں۔ اس میں اس نے ایک ایسی اصطلاح کا ذکر کیا ہے جس کے بارے میں ہم اچھی طرح جانتے…

میں نے کہا ” وہ پیار کے رشتے نہیں رہے ” کہنے لگی …

میں نے کہا " وہ پیار کے رشتے نہیں رہے " کہنے لگی کہ " تم بھی تو ویسے نہیں رہے " پوچھا " گھروں میں کھڑکیاں کیوں ختم ہو گئیں؟" کہنے لگی " وہ جھانکنے والے نہیں رہے " اگلا سوال تھا کہ مری نیند کیا ہوئی؟ بولی " تمہاری آنکھ میں سپنے نہیں رہے"…

جوہر ٹاؤن دھماکے میں بھارت ملوث

حیات عبداللہدہشت گردی کی جتنی سنسناہٹ ہے، آگ اور خون کی جس قدر آہٹ ہے اور انتشار و خلفشار کی جو بھی چاپ ہے، وہ بھارت سے افغانستان کے راستے، پاکستان آ رہی ہے۔بھارتی خفیہ ایجنسیوں کے عزائم کی تکمیل کے لیے افغانستان ایک سائبان

پانچ مچڑے ہوئے نوٹ۔۔حبیب شیخ

حبیب شیخ 23 June 2021ء یہ تحریر 1377 مرتبہ دیکھی گئی۔ خدا بخش گھبرایا گھبرایا سا تھا اتنے سارے لوگ، کچھ پڑھے لکھے، کچھ دولت کی انا میں اکڑے ہوئے، کچھ سرکاری عہدوں پر فائز…

جنوبی پنجاب کا شاندار ترقیاتی پروگرام

سمیرا ملک ایڈووکیٹوزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے بجٹ سیشن کے اختتامی اجلاس میں اپنی بات مکمل کرتے ہوئے یہ شعر پڑھا۔جنڑے دیوانہ ساکوں سڈیندناوہی راہبر ساکوں منیسنجڈاں شرافت دی رسم چلسیجڈاں محبت رواج بنڑسیسرائیکی وسیب کے

جو چلے تو جاں سے گزر گئے(قسط1)۔۔محمد اقبال دیوان

تعارف:زیرِ  مطالعہ کہانی دیوان صاحب کی پہلی کتاب ”جسے رات لے اڑی ہوا“(چوتھا ایڈیشن زیر گردش) میں شامل ہے۔اسے پڑھ کر رات گئے ایک افسر عالی مقام کا فون یہ معلوم کرنے کے لیے آیا کہ مصنف کو یہ حقائق جو ہر چند ایک قصے کی صورت میں بیان…